اسرائیلی افواج کو اپنے محاصرہ میں لینے کے لیے حماس نے مکمل کر لی ہے تیاری- جانے تفصیل میں اس پوسٹ میں

اسرائیلی افواج کو اپنے محاصرہ میں لینے کے لیے حماس نے مکمل کر لی ہے تیاری- حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ

اسرائیلی افواج کو اپنے محاصرہ میں لینے کے لیے حماس نے مکمل کر لی ہے تیاری- جانے تفصیل میں اس پوسٹ میں

اسرائیلی افواج کو اپنے محاصرہ میں لینے کے لیے حماس نے مکمل کر لی ہے تیاری- جانے تفصیل میں اس پوسٹ میں

شدت پسند اسرائیل کے خلاف تنظیم حماس کی اعلی قیادت کے قریبی ذرائع نے رائٹرز کو بتایا کہ حماس نے غذا کی پٹی میں نتیجہ خیز جنگ کے لیے تیاری کر لی ہے۔

حماس نے غذا شہر میں داخل ہونے کی کوشش کرنے والی شدت پسند اسرائیلی زمینی افواج کو گھیرے میں لینے کی مکمل تیاریاں کر رکھی ہیں۔

شدت پسند اسرائیل کے خلاف تنظیم حماس کی اعلیٰ قیادت کے قریب ذرائع نے رائیٹرز کو بتایا کہ حماس نے غذا کی پٹی میں نتیجہ خیز جنگ کے لیے تیاری کر دی ہے۔(جاری)


:یہ بھی پڑھیں

فلسطین اسرائیل میں کشیدگی حماس نے داغے راکٹ اسرائیل نے کی بمباری

اسرائیلی فوج  کی فائرنگ سے ایک نابالغ بچے سمیت دو فلسطینی شھید،اور دیگر زخمی

جنگ اسرائیل کی تباہی تک جاری رہیں گی حماس نے کیا خبردار۔- Hamas and Israel New update

غزہ: جبالیہ کیمپ میں قابض اسرائیلی بربریت نے انتہا کردی، سیکڑوں شھید اور زخمی

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے غزہ میں جنگ بندی کے امکان کو مسترد کر دیا

حماس اور اسرائیل جنگ تازہ ترین نیوز اپڈیٹ-غذا میں قتل عام کا 24 دن شدید بمباری


 

حماس کا خیال ہے کہ وہ اپنے دشمن اسرائیل کو جنگ بندی پر مجبور کرنے اپنے پیش قدمی کو طویل عرصے تک روک سکتی ہے

نازک صورتحال کے پیش نظر اپنے نام ظاہر کرنے سے انکار کرنے والے ان افراد کے مطابق غذا پر حکمرانی کرنے والی حماس نے ہتھیاروں، میزائلوں، خوراک، اور ادویات کا ذخیرہ جمع کر رکھا ہے۔

 ذرائع کا کہنا تھا کہ حماس کو یقین ہے کہ اس کی ہزاروں جنگجو فلسطینی علاقے کے نیچے کہو دی  گئی سڑنگوں کے شہر میں مینوں تک زندہ رہ سکتے ہیں اور شہری گوریلا اہم سوچ سے اسرائیلی فورسز کو مایوس کر سکتے ہیں۔

حماس کا خیال ہے کہ اسرائیلی پر محاصرہ ختم کرنے کے لیے بین الاقوامی دباؤ بڑھے گا کیونکہ شہریوں کی ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے اس لیے
اسرائیل جنگ بندی اور مذاکرات کے ذریعہ سمجھوتہ کرنے پر مجبور ہو سکتا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ اس سے حماس تنظیم اسرائیلی یر  یرغمالیوں کے بدلے ہزاروں فلسطینی قیدیوں کو رہائی جیسی ٹھوس رعایتوں کے ساتھ جنگ بندی کا مطالبہ کرے گی۔

اسرائیل اور حماس کی جنگ : حماس کی امریکہ کو دھمکی دو ٹوک انداز میں کہا تمہارا بھی وہی حشر ہوگا۔

اسرائیل اور حماس جنگ کے درمیان حماس کے سینیئر رہنما علی برا کا نے خبردار کیا ہے کہ ایک دن امریکہ تاریخ کا حصہ بن جائے گا اور روس اور
سوویت یونین کی طرح امریکہ بھی ٹوٹ جائے گا۔

حماس کے رہنما علی براکا نے  یہ تبصرہ دو نومبر کو ایک لبنانی یوٹیوب چینل کو انٹرویو کے دوران کیا۔

اسرائیل اور حماس  کی جنگ کے درمیان حماس نے امریکہ کو تازہ دھمکی دی ہے سات اکتوبر کو دہشت گرد تنظیم اسرائیل پر بمباری کرنے والی حماس نے امریکہ کو دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ کا بھی وہی انجام ہوگا جو سویت یونین اور روس کا ہوا ہے۔

حماس کے رہنما علی براکانے یہ تبصرہ دو نومبر کو ایک لبنانی یوٹیوب چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے دوران کیا۔

یروشلم پوسٹ نے حماس کی رہنما کے حوالے سے کہا ہے کہ  درمیان حماس کے سینیئر رہنما علی براکا نے میں خبردار کیا کہ ایک دن امریکہ تاریخ کا حصہ بن جائے گا اور روس اور سویت یونین کی طرح امریکہ بھی ٹوٹ جائے گا۔

حماس کے رہنما علی براکانے یہ تبصرہ دو نومبر کو ایک لبنانی یوٹیوب چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے دوران کیا۔

یروشلم پوسٹ نے حماس کے رہنما کے حوالے سے کہا ہے کہ امریکہ کی بنیاد برطانیہ اور گلوبل فری میسنری نے رکھی تھی اور وہ سویت یونین کی طرح منہدم ہو جائے گا۔

حماس رہنما نے خبردار کیا کہ مشرق وسطی میں امریکہ کے تمام دشمن ایک دوسرے کی قریب آ کر مشاورت کر رہے ہیں اور وہ دن بھی آ سکتا ہے

جب وہ ایک ساتھ جنگ میں شامل ہو جائیں گے اور امریکہ کو ماضی کا حصہ بنا دیں گے حماس رہنما کا مزید کہنا تھا کہ پھر امریکہ طاقتور نہیں رہے گا۔

یہ نہیں علی براک نے شمالی کوریا کی امریکہ پر حملہ کرنے کی صلاحیت کی بھی تعریف کی۔

حماس رحمہ کا مزید کہنا تھا کہ ہاں جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ شمالی کوریا کا لیڈر شاید دنیا کا واحد لیڈر ہے جو امریکہ پر حملہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

وہ واحد ہے جو یہ کر سکتا ہے علی براکا نے مزید کہا ہے کہ تا ہم شمالی کوریا کے پاس امریکہ پر حملہ کرنے کی صلاحیت موجود ہے اور دن بھی آ سکتا ہے جب شمالی کوریا مداخلت کرے گا کیونکہ آخر کار وہ ہمارے احتیاط کا حصہ ہے۔

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *