حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ کے تازہ ترین اپڈیٹس

فلسطین اسرائیل میں کشیدگی حماس نے داغے راکٹ اسرائیل نے کی بمباری

حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ کے تازہ ترین اپڈیٹ

اسرائیلی فوج میں بدھ کو بتایا کہ غذا کی جانب سے اسرائیل کی گاڑیوں پر فائرنگ کی گئی فائرنگ کی وجہ سے تشدد کا اغاز ہوا اور اسرائیلی فوجیوں نے اس کا جواب دیا۔

برسوں سے جاری جدوجہد پر رک لگانے کے سلسلے میں بات جیت کے راستے پر آگے بڑھنے کے باوجود غذا کی جانب سے بدھ کو اسرائیلی ظلم کے بعد حماس کے طرف سے اسرائیل میں راکٹ داغے

اور اس کے جواب اسرائیل فوجوں نے فضائی حملے کیے اسرائیلی فوج میں بدھ کو بتایا کہ غذا کی جانب سے اسرائیل کی گاڑیوں پر فائرنگ کی وجہ سے تشدد کا اغاز ہوا۔

اور اسرائیلی فوجوں نے اس کا جواب دیا بعد میں فلسطینوں نے سرحد پار سے تقریبا 70 راکٹ داغے اور  فوجیوں نے راکٹ داگنے والوں کو نشانہ بنا کر  حملہ کیا اقوام متحدہ کے مغربی ایشیا کی نمائندے۔

نگولائی ملادیوں نے کہا میں غذا اور اسرائیل کے درمیان حالیہ دونوں میں تشدد میں ہونے والے اضافہ اور خاص طور پر آج جنوبی اسرائیل کے طرف سے داغے  گئی راکٹ کے واقعے قصے کافی فکر مند ہوں۔

ادھر غذا میں فلسطین کی اسلامی گروپ حماس کے ایک سینیئر رکن نے بتایا کہ امریکی اور مصر کی ثلاثی میں کشیدگی کو کم کرنے کے سلسلے میں  مذاکرات اعلی درجے کے مراحل میں ہیں

غذا نیوز ڈیسک اسرائیل نے غزہ پر ہلاکت خیز فضائی حملوں کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے شہید فلسطین کی تعداد 961 ہو گئی ہے۔

 

حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ کے تازہ ترین اپڈیٹ

اقوام  کی طرف سے جاری کردہ اتحاد شمار کے مطابق سات اکتوبر کے بعد اسرائیل کے غذا میں فضائی حملوں سے اب تک کا کم از کم 3648 بچے اور دو ہزار 187 خواتین شھید ہو چکے ہیں۔

 جبکہ22ہزار240رافراد زخمی ہوئے ہیں، مجموعی طور پر 9061 معصوم شہری اسرائیل کی بربریت سے شہید ہوئے ہیں۔

دو ہزار چالیس افراد زخمی ہوئے ہیں مجموعی طور پر  نو ہزار ایک سٹھ  معصوم شہری اسرائیل کی بربریت سے شہید ہوئے ہیں۔

جمعہ کی صبح اسرائیلی فوج نے القدس ہسپتال کی طرح میں نئی فضائی حملوں حملے کیے ہیں جس کے نتیجے میں درجن و شہادت کا خود شہ ظاہر کیا جائے جا رہا ہے ۔

ہسپتال کی مغرب میں کے علاقے میں واقع ہے اس سے اسرائیل کی طرف سے بارہا برا راستہ فضائی حملوں کی دھمکی دی جاتی رہی ہے۔

عالمی ادارہ ہے صحت نے خبردار کیا کہ اسے ہسپتال پر حملہ جس میں اس وقت 14 ہزار فلسطین کے ساتھ ساتھ زخمی اور بیمار مریض رہائش پزیر ہے

بین الاقوامی قوانین کے تحت غیر قانونی ہوگا اور اسے جنگی جرم سمجھا جا سکتا ہے۔

اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق سات اکتوبر کے بعد غذا بھر کے 35 میں سے 14 اسپتال غیر فعال ہو چکے ہیں۔

علاقے میں کر سکے مریضوں کی سب سے بڑی علاج کا ترکیہ فلسطین دوستی ہسپتال میں ایدھن ختم ہو جانے کے بعد طبی خدمات کی فراہمی بند ہو گئی ہے۔

او ایس ایچ اے نے سوشل میڈیا اپڈیٹ فارم ایکس پر بتایا کہ حالات میں تقریبا 70 مریضوں کی زندگی خطرے میں ہے۔

او سی ایچ اے’ کی رات ہونے والی بمباری پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے شفا ہسپتال کا زچگی کا شعبہ بھی  اس ہسپتال میں کام کر رہا تھا۔

اقوام متحدہ کے مطابق اسرائیلی فوج کی زمینی کاروائیوں میں ان کی حماس کی ہلکا سا بریڈ کے ساتھ جھڑپوں کے نتیجے میں غذا شہر اور شمالی دیگر علاقوں سے بڑی حد تک کٹ کر رہ گئی ہیں۔

او سی ایچ اے نے بتایا ہے کہ جنوبی علاقوں کی جانب سے شمال میں تقریبا ت لاکھ پہ گھر لوگوں کے لیے انسانی امداد کی فراہمی بھی بند ہو گئی ہے

کیمپ کے قریب گھر پر اسرائیلی ڈرون حملے میں دو فلسطینی شہید ہو گئے ہیں۔

الجزیریہ کے مطابق تو فلسطینی اس وقت شہید ہوئے جب ایک اسرائیلی ڈرون نے مغرب کنارے میں جنین کیمپ کے قریب ایک گھر پر میزائل داغہ اور مقبوضہ مغربی کنارے میں جنین مہاجر کیمپ کے
کے مدافعت میں واقع اپنے ہدف کو نشانہ بنایا ہے۔
دوسری طرف اسرائیلی فوج نے جمعہ کی صبح سے مغربی کنارے کے مختلف علاقوں میں چھاپوں کا نیا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔

اسرائیلی فرض نے جنید کیمپ پر بھی دعوی بول دیا اور اس کے ارد گرد کے سڑکوں کو بلڈوز کر دیا۔

اسرائیلی فورسز نے کیمپ کے قریب  میلے میں ایک مکان کو بھی گھیرے میں لے لیا اور وہاں کے مکینوں کے فورا انخلا کا مطالبہ کیا فلسطینوں کے گھروں کو اڑانے کی دھمکی دی۔

اسرائیل کے بریج اور نصیرت پناہ گزین کیمپوں کے ارد گرد کے علاقوں پر حملے اور متعدد افراد شہید اور درجنوں زخمی ہونے کے اطلاعات ہیں۔ اور زخمیوں کو الشفا ہسپتال میں پہنچایا جارہا ہے۔

بریج اور نصیرت پناہ گزین کیمپوں کے ساتھ ساتھ غذا کی پٹی کی وسطی حصے میں واقع دیر بلاح شہر میں بھی فضائی حملوں سے ہلاکتوں کی اطلاع ملی ہے۔

سات اکتوبر کے بعد اسرائیل کی کاروائیوں میں مقبوضہ مغربی کنارے میں شہید ہونے والوں کی تعداد 138 ہو گئی ہے جبکہ 2100 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا کہ اس کی افواج نے غذا کی شمالی حصے کا گہیراؤں کر لیا ہے۔

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فضائی اور بحریہ زمین اور سائل کے ساتھ ساتھ اہداف کو نشانہ بنا رہی ہے
24 گھنٹوں میں لڑائی کے نتیجے میں غذا کی پٹی میں کے اندر 130 جنگجو مارے گئے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ وہ راکٹ لانچنگ سائٹس، فوجی گوداموں اور سرنگوں کے نظام پر بھی حملے جاری رکھے گی۔
دوسری جانب 7 اکتوبر کے بعد حماس کی کارروائیوں میں 335 اسرائیلی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *