حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ
|

جنین کیمپ میں اسرائیلی فوج کی بربریت سات فلسطین شہید

جنین کیمپ میں اسرائیلی فوج کی بربریت سات فلسطین شہید۔

حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ

جمعرات کی صبح سے دوسری بار جنید شہر اور اس کے کیمپ پر اسرائیلی قبض فوجی کیے دہشتگردی میں سات نوجوان شہید اور 13 زخمی ہو گئے ہیں۔

فلسطینی وزارت صحت نے تصدیقی ہے کہ جنین میں جمعرات کو اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کاروائی میں شہید ہونے والوں کی تعداد سات ہو گئی ہے اس کے علاوہ 13 زخمی ہوئے ہیں جن میں بعض کی حالت تشویش ناک بیان کی جاتی ہے۔

جنین کے الرازی ہسپتال کے ڈائریکٹر محمد کامل نے جنین کیمپ سے تعلق رکھنے والے نوجوان 23 سالہ ایہام محمد العمیر کی شہادت کی تصدیق کی وہ شہید ایسر العمیر کے بھائی ہیں۔ 

وفا نیوز ایجنسی کے مطابق قابض فوج کی بڑی افواج نے ایک فوجی بلڈوزر کے ہمراہ کیمپ پر کئی سمتوں سے دھاوا بول دیا۔

ان کے  سنائپرز نے کیمپ کو متعدد عمارتوں کی چھتوں پر چڑھا دیا اور بلڈوزر نے کیمپ پر اس کی اطراف کی گلیوں اور دیواروں کو تباہ کر دیا۔

مقامی ذرائع اطلاع دی ہے کہ جائے وقوع پر شدید تصادم اور جھڑپیں ہوئی ہیں، جس کے نتیجے میں اب تک بڑی تعداد میں شہید اور زخمی ہوئے ہیں جن میں ایک پیرا میڈیکل اہلکار بھی شامل ہیں۔

مزاحمتی کارکنوں نے حملہ آور فوج کی کئی گاڑیاں بارودی الات سے اڑا دیے۔

یہ بھی پڑھیں

سات اکتوبر سے اب تک اسرائیلی زخمیوں کی تعداد  سات سو باسٹھ ہزار ہوگئی ہے۔

حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری جنگ -سات اکتوبر سے اب تک اسرائیلی زخمیوں کی تعداد  سات سو باسٹھ ہزار ہوگئی ہے

غذہ `بچوں کا قبرستان فلسطین کی شہادتیں 10 ہزار سے تجاوز کر گئی- حماس اور اسرائیل درمیان جاری جنگ

عینی شاہدین نے بتایا کہ قبض فوج نے جنین میں شہید خلیل سلیمان گورنمنٹ ہسپتال اس کی گردنواح کو گھیرے میں لے لیا اور ایمبولنس سمیت نقل مکانی کرنے والی ہر چیز پر فائرنگ کی۔

حلال احمر سوسائٹی نے بتایا کہ قبض افواج نے جنین میں ایک ایمبولنس کو نشانہ بنایا اور اس کے ایک اہلکار کو پیٹ میں گولی مار کر زخمی کر دیا۔

انفارمیشن سینٹر کے مطابق شہداء کے ساتھ گزشتہ سات اکتوبر سے اب تک شہید ہونے والوں کی تعداد 177 ہو گئی ہے جبکہ قابض فوج نے  2400 سے زیادہ فلسطینیوں کو حراست میں لے لیا ہے۔

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *